گلوں پہ لائی نکھار بارش

ہے رحمتِ کردگار بارش
گلوں پہ لائی نکھار بارش

ہے موسمِ خوشگوار بارش
سکوں میسر، بہار بارش

غبار دل کا دھلے گی میرے
تو دے گی مجھ کو قرار بارش

مرا تخیل ہوا ہے صحرا
ہے مقتضی سبزوار بارش

سکون و راحت کرے فراہم
ہے باعثِ افتخار بارش

مہک اٹھے گا ہر ایک گلشن
اگر جو ہو مشک بار بارش

ہے خوب چھائی جو سر پہ تیرے
وہ توڑ دے گی خمار بارش

ہمیشہ شاداب اعظمی پر
الٰہی کر بے شمار بارش

رشحات قلم :- شاداب اعظمی
چریاکوٹ مئو


 

شاہِ کوثر بن کے امت کے نگہباں آئے ہیں

Share this on

متعلقہ اشاعت

جواب دیں