عشق کہانی

عشق کہانی

پیر زادہ قاسم

میں بے قیمت تم بے قیمت
پھر
یہ اپنی عشق کہانی کون سنے گا
سب کے اپنے اپنے قصے
سب کی اپنی اپنی باتیں
سب کی اپنی اپنی صحبت
سب کی اپنی اپنی راتیں
سب کے غم بس ذاتی غم ہیں
سب کی خوشیاں ذاتی خوشیاں
ہم کہتے ہیں وہ بے قیمت
وہ کہتے ہیں ہم بے قیمت
ایسے میں
کس کس کی کہانی
کس کی زبانی
کون سنے گا
میری تمہاری عشق کہانی کون سنے گا
سب بے قیمت

پیر زادہ قاسم

Share this on

Share on facebook
Share on whatsapp
Share on twitter
Share on telegram
Share on email
Share on print

متعلقہ اشاعت

جواب دیں